چار سدہ میں دھماکہ،افواج پاکستان حرکت میں آگئی

چار سدہ﴿روزنامہ یورپ انٹرنیشنل﴾چارسدہ کے علاقے تنگی سیشن کورٹ کے مرکزی دروازے پر زوردار دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں پانچ افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں ۔

حکام کے مطابق یہ دھماکہ مرکزی دروازے پر ہوا اور اس کے بعد اندھا دھند فائرنگ کی گئی ۔ دھماکے کے بعد سیکیورٹی فورسزنے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔ تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کرتے ہوئے ڈاکٹروں کی چھٹیاں منسوخ کر دی گئیں ۔ ڈپٹی کمشنر طاہر ظفر نے کہا کہ سکیورٹی انتہائی سخت تھی اس کی وجہ سے دہشتگرد سیشن کورٹ کے اندر داخل نہیں ہوسکے اور زیادہ نقصان نہیں ہوا ۔ دھماکہ بم کے ذریعے کیا گیا یا خودکش تھا اس کی فی الحال تصدیق نہیں کی جاسکتی ۔ زخمی کتنے ہیں اور ان کی کیا حالت ہے اس کی فی الحال تصدیق نہیں کی جاسکتی ہے ۔

اس خبر کو بھی پڑھیں:پاک فوج کا توپ خانہ افغان سرحد پر نصب کرنے کا حکم

دوسری جانب کورٹ میں موجود عینی شاہد کا کہنا تھا کہ ایک خودکش حملہ آور سیشن کورٹ کے اندر داخل ہوا اور اس نے وکلا کے درمیان آکر خود کو دھماکے سے اڑا دیا ، اس موقع پر سیشن کورٹ میں موجود وکلا نے بھاگ کر اپنی جانیں بچائیں ۔ ضلع ناظم چارسدہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ حملے میں ملوث دو حملہ آوروں کو ہلاک کر دیا گیا ہے ۔ مرنے والوں میں ایک وکیل شامل ہے ۔

ڈی آئی جی مردان کا کہنا ہے کہ ایک دہشتگرد کو مرکزی گیٹ اور دو کو کچہری کے اندر فائرنگ کر کے ہلاک کیا گیا ۔اس حملے کے بعد افواج پاکستان نے فیصلہ کیا ہے کہ افغانستان میں موجود دہشتگروں کے خلاف کاروائی ضروری ہو گئی ہے۔

اس خبر کو بھی پڑھیں:پاک فوج کا توپ خانہ افغان سرحد پر نصب کرنے کا حکم