حکومت کی ترجیح میٹروبس کیوں ؟

موجودہ حکومتِ پاکستان کی ترجیح عوامی مسائل نہیں اپنے زاتی فمادات ہیں۔آج پاکستان کا مسئلہ تعلیم ، صاف پانی ،بےروزگاری اور صحت ہے نا کہ میٹروبس اور اورینج لائن۔
اگر دیکھا جائے تو میٹروبس لاہور،اسلام آباد،راولپنڈی اور اب ملتان میں کرپشن کے نئے کیس سامنے آ رہےہیں جو کہ عوام کی نظروں سے اوجھل نہیں ہیں کے کس حرح حکومت نے اپنے من پسند لوگوں کو نوازا ہے۔مجھے سمجھ نہیں آتا کہ حکومت کو عوام کے بنیادی مسائل چھوڑ کر میٹروبس اور اورینج لائن میں ایسی کیا دلچسپی ہے ؟
اگر یہ کہا جائے کہ حکومت کی دلچسپی عوامی مسائل نہیں کرپشن ہے تو غلط نہ ہو گا ۔

پانی جوکہ انسانی زندگی کی بنیادی ضرورت ہے۔لیکن اس ملک کی عوام اسی سے محروم ہے۔پاکستانی آبادی کا %44 حصہ صاف پانی سے محروم ہے ۔اس دورہ حاضر میں کیء بیماریاں کی وجہ صاف پانی کی قلت ہے۔بچوں کی نشونما اور گروتھ میں اہم رکاوٹ مضرِ صحت پانی ہے۔اس ملک میں صاف پانی کی فراہمی ایک خواب بن کر رہ گیا ہے ۔پھر بھی حکومت کی ترجیح میٹروبس اور اورنج لائن کیوں ؟

ہمارے مملک میں اس وقت تعلیم کا شدید بحران ہے۔ملک میں ظلم و بربریت کی انتہا یہ ہے کہ طلب علم تو موجود ہیں لیکن کہیں سکولز نہيں ہیں تو کہیں ٹیچرز ۔تعلیم اس حد تک مہنگی ہو گی ہےکہ غریب عوام بس اب بہتر تعلیم کا خواب ہی دیکھ سکتی ہیں۔جس طرح حکومت کا طرزِ عمل ہے شاید چند سالوں تک یہ خواب بھی غریب عوام کی پہنچ سے دور ہو جائے گا۔”یونیسکو کی ایک تازہ رپورٹ کے مطابق پاکستان میں 5۰5ملین بچے ایسے ہیں جو کبھی سکول گئے ہی نہیں اور پاکستان میں ناخواندہ بالغوں کی تعداد میں بھی مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔”(UNESCO)پھر بھی حکومت کی ترجیح میٹروبس اور اورنج لائن کیوں ؟

بےروزگاری ہمارے معاشرے میں لعنت کی طرح پھیل دہی ہے۔ہمارے معاشرے میں اب بھی 5۰3ملین لوگ ایسے ہیں جو بےروزگاری کی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں اور اگر معاشرے میں بےروزگاری پر قابو پہ لیا تو ہم بہت جلد معاشرے میں معاشی استحکام لاسکتے ہیں۔پاکستان میں جرائم کی کچھ حد تک وجہ بےروزگاری بھی ہے۔
پھر بھی حکومت کی ترجیح میٹروبس اور اورنج لائن ٹرین کیوں ؟

صحت انسان کی زندگی کا ایک اہم شعبہ ہے لیکن حکومت پاکستان شاید صحت کے شعبہ سے سنجیدہ نہيں ہےیہ پھر حکومت کی نظرمیں صحت کا کوئی مسئلہ ہے ہی نہیں۔نہ جانے کتنے بےبس لوگ روز بغیر کسی طبعی امداد کے اس دنیائے فانی سے کوچ کرجاتے ہیں۔ناجانے کیوں حکومتِ وقت کو غریب عوام کی بےبسی نظر نہیں آتی۔پاکستان میں نجی ہسپتال اتنے مہنگے ہیں کہ غریب آدمی چاہ کر بھی وہاں علاج نہيں کرواسکتا اور گورنمنٹ ہسپتالوں کی حالت اتنی نازک اور ابتر ہےکہ علاج تو دور کی بات ہے وہاں چند لمحے گزارنے بھی دشوار ہیں۔گورنمنٹ ہسپتالوں میں ڈاکٹر اور سٹاف حضرات تو اکثر غائب رہتے ہیں لیکن اس سب کا خمیازہ تو بس غریب عوام کو بھگتنا پڑتا ہے۔
پھر بھی حکومت کی ترجیح میٹروبس اور اورنج لائن کیوں ؟

یہ وہ چند بنیادی سوالات ہیں جن کا جواب ہر پاکستانی حکومتِ وقت سے چیخ چیخ کر مانگ رہا ہے۔لیکن یہ سب عوامی مسائل ہیں اس لئے شاید حکومتِ وقت کی اس میں کوئی دلچسپی نہیں ہے۔