یورپ میں16سال سے کم بچوں کیلئے واٹس ایپ پر پابندی عائد

لندن﴿روزنامہ یورپ انٹرنیشنل﴾سوشل میڈیا کی مقبول میسیجنگ ایپلیکیشن واٹس ایپ نے اعلان کیا ہے کہ یورپ میں 16 سال سے کم عمر افراد واٹس ایپ استعمال نہیں کرسکیں گے۔یورپی یونین میں ڈیٹا کے تحفظ کا اطلاق اب واٹس ایپ پر بھی ہوگا اور ان قوانین کے تحت 16 برس سے کم عمر لڑکے لڑکیاں اپنے والدین کی اجازت کے بغیر یہ سروس استعمال نہیں کرسکیں گے۔فنانشل ٹائم کی رپورٹ کے مطابق یورپی یونین کے 28 ملکوں میں واٹس ایپ استعمال کرنے کی کم سے کم حد 13 برس تھی جسے بڑھا کر 16 برس تک کیا جارہا ہے۔یورپی یونین میں اب واٹس ایپ استعمال کرنے والے پرانے اور نئے صارفین سے اب یہ پوچھا جائے گا کہ آیا ان کی عمر 16 برس سے زائد ہے یا نہیں۔واٹس ایپ کی مالک فیس بک کمپنی کے اعلامیے کے مطابق فی الحال یورپ سے باہر واٹس ایپ استعمال کرنے والوں کے لیے یہ قانون متعارف نہیں ہوا ہے۔علاوہ ازیں واٹس ایپ نے اس اصول کے تحت نئے اکاو¿نٹ بنانے کی صورت میں کسی قسم کی شناختی دستاویزات کی بھی اب تک ڈیمانڈ نہیں کی ہے۔واٹس ایپ کی بلاگ پوسٹ کے مطابق یورپی صارفین کے لیے آئرلینڈ میں ایک نیا ذیلی ادارہ قائم کیا جا رہا ہے، لیکن اس کا یہ مطلب نہیں کہ یورپی یونین کے صارفین کا ڈیٹا یورپی سرحدوں کے اندر ہی محفوظ رکھا جائے گا۔واٹس ایپ کے مطابق ان کی سروس کے ذریعے بھیجے گئے پیغامات صرف ’اینڈ ٹو اینڈ‘ یعنی صرف ارسال کرنے والے اور موصول کرنے والے ہی پڑھ سکیں گے۔ یہ پیغامات خود واٹس ایپ سروس نہیں پڑھ سکتی کیونکہ نئے اقدامات کے تحت کمپنی اب ڈیٹا بھی نہیں پڑھ پائے گئی، جیسا کہ اس سے قبل پڑھ سکتی تھی۔