انوکھی شادی: امریکی خاتون نے ریلوے اسٹیشن سے شادی کر لی

نیویارک﴿روزنامہ یورپ انٹرنیشنل﴾مغرب میں ہم جنس شادیوں کی خباثت تو جڑیں پکڑ ہی چکی تھی مگر اب ایک خاتون کے ایسی چیز سے شادی کرنے کی خبر آ گئی ہے کہ آپ سن کر ششدر رہ جائیں گے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق امریکی ریاست کیلیفورنیا کے شہر سین ڈیاگو میں 45سالہ کیرل نامی خاتون نے ’سانتا فے‘ نامی ریلوے سٹیشن کی عمارت سے شادی کر لی ہے اورہر بیوی کی طرح اپنے نام کے آخر میں سٹیشن کا نام بھی شامل کر لیا ہے اور اپنا نام کیرل سانتا فے رکھ لیا ہے۔ کیرل گزشتہ 36سال سے سانتا فے کی محبت میں گرفتار ہے اور حیران کن طور پر دعویٰ کرتی ہے کہ وہ بھی اس سے محبت کرتا ہے۔اس کا کہنا ہے کہ مجھے اس سٹیشن سے بہت چھوٹی عمر میں ہی محبت ہو گئی تھی۔
کیرل نے36سالہ محبت کو اس سال کرسمس کے دن شادی کے بندھن میں باندھنے کا فیصلہ بھی کر لیا ہے۔ کیرل کا کہنا ہے کہ ”ہم طویل عرصے سے ایک دوسرے سے محبت کرتے آر ہے تھے تاہم جنسی تعلق کا آغاز 2011ءمیں ہو۔ تاہم میں اس تعلق کو اس ڈر سے خفیہ رکھتی ہوں کہ کہیں انتظامیہ میرا اس سٹیشن میں داخلہ بند نہ کر دے۔“ کیرل کا دعویٰ ہے کہ وہ اور سانتا فے نامی یہ سٹیشن کسی بھی میاں بیوی کی طرح ذہنی طور پر جنسی تعلق بھی قائم کرتے ہیں۔ کیرل روزانہ بس کے ذریعے 45منٹ کا سفر کرکے سانتا فے آتی ہے اور یہاں وقت گزارتی ہے۔ وہ کہتی ہے کہ میں اپنے شوہر کے ساتھ وقت گزارنے آتی ہوں۔واضح رہے کہ یہ اس نوعیت کا پہلا واقعہ نہیں ہے۔ 2007ءمیں ایریکا ایفل نامی خاتون نے پیرس کے معروف ایفل ٹاور سے شادی کی تھی۔